Skip to main content

Posts

Showing posts from November, 2011

Sath rangon se kelny wala

Sath rangon se kelny wala Ek naya rung ubar sakta hay Zulf ho ya ghareeb ki qismat Dosra kab sawar skta hay

Roz taaron ki numaish me khalal parrta hy

Roz taaron ki numaish me khalal parrta hy  Chaand pagal hy andheray me nikal parrta hy
 Ek deewana musafir hy meri ankhoon me  Waqt be-waqt thehar jata hy, chal parrta hy
 Apni tabeer k chakar me mera jaagta khawab  Roz suraj ki trah ghar sy nikal parrta hy
 Roz pathar ki himayat mein ghazal likhtay hein  Roz sheeshon sy koi kaam nikal parrta hy
 Uski yaad ai hy saanso zara ahista chalo  Dharkanoon sy bhi ibadat me khalal parta hy

Haqeeqat Hay,Yaqeen Kar Lo,Main Uss Ko Bhool Kar Khush Hoon

Haqeeqat Hay,Yaqeen Kar Lo,Main Uss Ko Bhool Kar Khush Hoon  Muhabbat Mar Chuki Ab To,Main Uss Ko Bhool Kar Khush Hoon
 Badalti Rutt Ki Wajah Se, Zra Bojhal Tabiyat Hay  Yun Mera Haal Mat Poocho,Main Uss Ko Bhool Kar Khush Hoon
 Mery Lehjay Pa Mat Chonko,Meri Aankhon Mein Mat Jhanko  Yun Hairat Se Na Dekho tm,Main Uss Ko Bhool Kar Khush Hoon
Tumhein Kya Weham Hay Kiun Raat Bhar Milnay Nahi Aatin  Aey Meri Neend Ki Pariyoon,Main Uss Ko Bhool Kar Khush Hoon
Bhala Kyoun Roz Bahaien Aansoo, Kyoun Mujh Sey Milney Aatii Hain  Tum Us Kii Yaad Sey Keh Do Main Us Ko Bhool Kar Khush Hoon Udasi Saray Ghar Mein Pahilti Jati Hay Gham Ban Kar  Dar O Deewar Pe Likh Do,Main Uss Ko Bhool Kar Khush Hoon…

Wo aa ke do ghari ke liye baat kar gai

وہ آ کے دو گھڑی کے لئے بات کر گئی  جتنے بھی حوصلے تھے مرے مات کر گئی
 دیں درمیاں کہیں بھی سجھائی نہیں دیا  کتنی طویل میرے لئے رات کر گئی
 کچھ بھی سمجھ آتا نہیں درد کے سوا  اتنے عجیب روح کے حالات کر گئی
 کیا رونقیں ہیں عارض و دامان پر مرے  میرے تو آنسوؤں کو بھی بارات کر گئی
 ہم تو اداس لوگ تھے لیکن یہ زندگی  دیکھو ہمارے ساتھ بھی کیا ہاتھ کر گئی

Wo adaye dilbari ho k nawaye ashiqana

Wo adaye dilbari ho k nawaye ashiqana  Jo dilon ko fatah kerle wohi fatah e zamana  Ye tera jamal e kamil ye shabab ka zamana  Dil e dushmana salamat dil e dostan nishana

 Kabhi husn k tabiyat na badal saka zamana  Wohi naz e beniyazi wohi shan e khusruana  Mein hon us maqam per ab k faraq o wasl kese  Mera ishq bhi kahani tera husn bhi fasana

 Mere zindagi tu guzari tere hijr k sahare  Mere maut ko bhi pyare koi chahye bahana  Tere ishq ki karamat ye ager nahi tu kya hai  Kabhi be adab na guzra mere pas se zamana

 Tere douri o hazori ka hai ajeb alam  Abhi zindagi haqeqat abhi zindagi fasana  Mere hamsafeer e bulbul mera tera sath he kya  Main zameer e dasht o darya, tu aseer e ashiyana

 Main woh saaf he na kehdon jo hai farq mujh mein tujh mein  Tera dard dard e tanha, mera gam gam e zamana  Tere dil k toutne per hai kisi ko naz kya kya  Tujhe aey jigar mubarak ye shikast e fatehana !!!

Woh Tabaah Haal Woh Sar-phiray Barra Naam Ishq Mein Kar Gaye

Woh Tabaah Haal Woh Sar-phiray Barra Naam Ishq Mein Kar Gaye

Teri Justujuu Mein Jo Kho Gaye, Teri Aarzuu Mein Jo Marr Gaye.

Hai Ravish Ravish Mein Shaguftagi, Kahin Tazgi Kahin Naghmagi
Ye Chaman Se Kis ka Guzar Hua, K Tamaam Phool Nikhar Gaye.
Sab Giraaniyan Teri Saath Theen, Teri Meharbaniyan Saath Theen
Teri Aaarzuu Mein Jahan Rahey, Teri Justujuu Mein Jidhar Gaye.
Kahain Kis Tarha Se Ye Waqeya, Barra Dukh Bhara Hai Ye Haadsa
Jinhain Hum Samajhtay Thay Aashna,Woh Nazar Chura K Guzar Gaye
Rahay Sahilon Pe Hum, Kabhi Iss Taraf, Kabhi Uss Taraf

Jo Talash e Zaat Mein Magan Thay,Woh Bhanwar Mein Kaisay Utar Gaye .. !! 

Wo jo phool rah ki dhool te wo mehek utay

Tum ko dekha to yeh khayal aaya

Tum ko dekha to yeh khayal aaya
Zindagi dhoop tum ghana saaya 
Aaj phir dil ne ek tamanna ki 
Aaj phir dil ko hum ne samjaya 
Tum chale jao gey to sochein gey 
Hum ne kya khoya, hum ne kya paya 
Hum jise gungunaa nahee sakte 
Waqt ne aisa geet kyun gaya 
Tum ko dekha to khayal aaya 
Zindagi dhoop tum ghana saaya

Wo jo reza reza wajood ta...

The most difficult phase of life

The most difficult phase of life is not one when no one understand you; It is when you don't understand yourself;

Akhri khwab...

Tuj pe kul jati mari rooh ki tanhai bhi

Tuj pe kul jati mari rooh ki tanhai bhi mari ankhon mein khabi jank ke daika hota..

Shoq e tabeer mein ghar bar luta baita ta...

شوق ِتعبیر میں گھر بار لٹا بیٹھا تھا  میں بھی کس خواب سے امید لگا بیٹھا تھا
آپ سے پہلے بھی کچھ لوگ یہاں آئے تھے میں جنہیں اپنے دل میں بسا بیٹھا تھا
وہ اچانک ہی اندھیروں سے اِدھر آ نکلا روشنی تیز تھی، بینائی گنوا بیٹھا تھا
کچھ تو لہروں نے پریشن کیا تھا دل کو اور کچھ میں بھی سمندر سے خفا بیٹھا تھا
اس کے بندوں کی صدیں تو کوئی کیا سنتا ایسا عالم تھا کے خاموش خدا بیٹھا تھا

Yehi Aarzu rhi Umar bhar k Mohabatain Mere sath hon

Yehi Aarzu rhi Umar bhar k Mohabatain Mere sath hon,
 Kabi aisa Ishq kya nhi k Nadamaten Mere sath hon
 Koi aisa Hurf likha nhi k ho Sharmsar Qalam Mera,
 Koi aisa Jurm kya nhi k Wazahaten Mere sath hon
 Faqt ek Shakhs ki Arzu mai guzar rhi hai ye Zindagi
 Ye Talab nhi k tamam Shehr ki Chahaten Mere sath hon...

Apni Masti ke tere qurb ki sarshari mein

اپنی مستی، کہ ترے قرب کی سرشاری میں   اب میں کچھ اور بھی آسان ہوں دشواری میں   کتنی زرخیز ہے نفرت کے لیے دل کی زمیں   وقت لگتا ہی نہیں فصل کی تیاری میں   اک تعلق کو بکھرنے سے بچانے کے لیے   میرے دن رات گزرتے ہیں اداکاری میں   وہ کسی اور دوا سے مرا کرتا ہے علاج   مبتلا ہوں میں کسی اور ہی بیماری میں   اے زمانے میں ترے اشک بھی رو لوں گا ، مگر   ابھی مصروف ہوں خود اپنی عزاداری میں   اس کے کمرے سے اٹھا لایا ہوں یادیں اپنی   خود پڑا رہ گیا لیکن کسی الماری میں   اپنی تعمیر اٹھاتے تو کوئی بات بھی تھی   تم نے اک عمر گنوادی مری مسماری میں   ہم اگر اور نہ کچھ دیر ہوا دیں ، تو یہ آگ   سانس گھٹنے سے ہی مر جائے گی چنگاری میں   تم بھی دنیا کے نکالے ہوئے لگتے ہو ظہیر   میں بھی رہتا ہوں یہیں ، دل کی عملداری میں

yeh bhi kar guzr mere humsafr

yeh bhi kar guzr mere humsafr
 mere sare sapnoon ko tor kar
 meri rehguzr ko ujaar dey
 yeh jo maan hai issey tor kar
 mere dost mujh ko faraib dey
"mujhey nafratoon ka azaab dey"
 mujhey dey "tou" itni aziyatien
 meri zaat ko youn bigaar dey
 mere qalb ko dey niya zakhm
 meri rooh mien nishtar utaar dey
 mujhey khuwab dey kisi abr ka
 aor kisi qabr mien utar dey
 mujhey aese rastoon pe le k chul
 keh qadam barhaoon tou gir paroon
 "tou" aik aor teer utaar dey
"Yeh Bhi kar guzr mere humsafr"
 kuch iss tarahs sey sitam barha
 "meri zindagi hee mujhey maar dey"

Agar kuch nam dena ho Mujay insan mat kehna

اگر کچھ نام دینا ھو  مجھے انسان مت کہنا
 جدا چہرے، جدا سب کے بےشک نام ھوتے ہیں  مگر انسانیت کے اب یہاں پر دام ھوتے ہیں
 تم میرے دام مت دینا  مجھے یہ نام مت دینا
 اگر کچھ نام دینا ھو  مجھے احساس کہہ دینا
 مگر ٹھہرو!  مجھے احساس مت کہنا
 میرا بس نام رہ جائے مجھے ایسا نہیں رھنا  مجھے احساس مت کہنا  مجھے ساون ہی کہہ دینا

 مگر ٹھہرو!  مجھے ساون بھی مت کہنا  برستا ھے مگر  رت کے بدلتے بیت جاتا ھے
 اگر کچھ نام دینا ھو  مجھے آنسو ہی کہہ دینا  جنم لینا کسی کی آنکھ میں  رخسار پر مرنا  یہی جس کی حقیقت ھے  چلو آنسو ہی کہہ دینا
 مگر دیکھو!  کسی کی آنکھ میں مجھ کو کبھی آنے نہیں دینا  کہ قیمت آنسوؤں کی اب ادا  تم سے نہیں ھو گی  مجھے آنسو نہیں کہنا  مجھے آنکھوں میں بستا ایک سپنا ھی کہہ دینا  کہ سپنے آنکھوں میں تاروں کی طرح  جھلملاتے ہیں
 مگر ٹھہرو!  مجھے سپنا بھی مت کہنا  کہ سپنے ٹوٹ جاتے ہیں  مجھے اپنا بھی مت کہنا  کہ اپنے روٹھ جاتے ہیں

Khabi safar to khabi sham le gaya muj se

Shair hota hay ab maheenon main

Es dard ki dunya se guzar keaue nahi jaty

Main naheen maanta Main naheen jaanta.

Deep jis ka sirf mehellaat hi main jalay,
Chand logon ki khushyon ko lay ker chalay, Wo jo saye main har maslihat kay palay; Aisay dastoor ko, Subh e bay noor ko, Main naheen maanta, Main naheen jaanta.

Main bhee kha’if naheen takhta e daar say,
Main bhee Mansoor hoon, keh do aghyaar say, Kyun daraatay ho zindaan ki divar say, Zulm ki baat ko, Jehel ki raat ko, Main naheen maanta, Main naheen jaanta.
Phool shaakhon pay khilnay lagay tum kaho,
Jaam rindon ko milnay lagay tum kaho, Chak seenon kay silnay lagay tum kaho, Iss khulay jhoot ko, Zehan ki loot ko, Main naheen maanta, Main naheen jaanta.
Tum nay loota hai sadyon hamara sakoon,
Ab na hum per chalay ga tumhara fasoon, Chara gar main tumhain kiss tara say kahoon? Tum naheen charaagar, Koi maanay magar, Main naheen maanta,

Boht bechain rahti hay tabiyat ek muddat se..

بہت بے چین رہتی ہے طبیعت ایک مدت سے دل و جاں کو نہیں مل پائی راحت ایک مدت سے

مجھے بھی روک رکھا ہے میری مصروفیت نے اور
نہیں کی تم نے بھی ملنے کی زحمت ایک مدت سے

بہت مجبور ہوں ورنہ بہت محسوس کرتا ہوں
میری جاں تم سے ملنے کی ضرورت ایک مدت سے

کسی دن آ کے مل جاؤ کہ اپنا لی ہے آنکھوں نے
تمہاری یاد میں جگنے کی عادت ایک مدت سے

Ye zindagi bhi ajeeb hai

 یہ زندگی بھی عجیب ہے . . . کبھی چاہتوں میں چُھپا لیا کبھی نفرتوں میں جلا دیا کبھی ہنس کے ہم کو منا لیا کبھی آنسوؤں میں بہا دیا
یہ زندگی بھی عجیب ہے

کبھی خوشبو بن کے بکھر گئی کبھی لمحے بھر میں گزر گئی کبھی جگنو بن کے چمک اُٹھی کبھی مل کے پھر سے بکھر گئی
یہ زندگی بھی عجیب ہے

Mein koi baat karun baat per banany ki

میں کوئی بات کروں بات پھر بنانے کی  کہ میرے دوست کو عادت ہے روٹھ جانے کی
 میں تنکا تنکا بناتا ہوں آشیاں اپنا  وہ مجھ سے بات کرے کشتیاں جلانے کی
 سبھی کو اس کے لیے میں تو چھوڑتا کیسے  جسے تھی ابتدا سے جستجو زمانے کی
 میں حسن و عشق سے ارمان بچ نہیں سکتا  ملی ہے ورثے میں عادت یہ چوٹ کھانے کی
 اسے تھا شوق کہ مجھ کو وہ چھوڑ جائے گی  مجھے تو ضد تھی سبھی دوریاں مٹانے کی
 میں اس کی یاد میں اکثر نڈھال ہوتا تھا  کہ اس کے سامنے مجبوریاں زمانے کی
 ہماری زندگی ہے دھول جس کے قدموں کی  کبھی نہ اس نے کی کوشش مجھے منانے کی

Ajeeb tarz ke shedat pasand te hum bhi

Ajeeb tarz ke shedat pasand te hum bhi khushi khushi mein kai ghum bhi pal rakte han

Roshni mizajon ka kya ajub muqadar hay

روشنی مزاجوں کا  کیا عجب مقدر ہے   زندگی کے رستے میں  بچھنے والے کانٹوں کو   ...راہ سے ہٹانے میں   ایک ایک تنکے سے  .... آشیاں بنانے میں   خوشبوئیں پکڑنے میں   ....گلستان سجانے میں   عمر کاٹ دیتے ہیں   !!!....عمر کاٹ دیتے ہیں 
اور اپنے حصّے کے پھول   .....بانٹ دیتے ہیں   کیسی کیسی خواہش ہو   قتل کرتے جاتے ہیں   ...درگزر کے گلشن میں  ابر بن کر رہتے ہیں   ...صبر کے سمندر میں  کشتیاں چلاتے ہیں 
 یہ نہیں کے ان کو اس   روز و شب کی کاہش کا   کچھ صلہ نہیں ملتا   مرنے والی آسوں کا   خون بہا نہیں ملتا 
 زندگی کے دامن میں  جس قدر بھی خوشیاں ہیں   سب ہی ہاتھ آتی ہیں   سب ہی مل بھی جاتی ہیں   ....وقت پر نہیں ملتیں   !!!!....وقت پر نہیں آتیں 
 یعنی ان کو محنت کا  اجر مل تو جاتا ہے 
لیکن اس طرح جیسے   قرض کی رقم کوئی   قسط قسط ہو جائے  اصل جو عبارت ہو   پس نوشت ہو جائے  فصل گل کے آخر میں   !!!....پھول ان کے کھلتے ہیں   ان کے صحن میں سورج   !!!....دیر سے نکلتے ہیں

Kasak rahi ghar gawayain nendain na chain paya to kya karogy

کسک رہی گر ، گنوائیں نیندیں ، نہ چین پایا تو کیا کرو گے  گئی رتوں نے مری طرح سے تمہیں رلایا تو کیا کرو گے
 یہ شان، عہدہ، یہ رتبہ ،درجہ ، ترقیوں کا یہ طنطنہ سا  کسی بھی لمحے نے کر دیا گر تمہیں پرایا تو کیا کرو گے
 ابھی ہیں معقول عذر سارے،جواز بھی ہیں بجا تمہارے  کبھی جو مصروف ہو کے میں نے تمہیں بھلایا تو کیا کرو گے
 چراؤ نظریں ، چھڑاؤ دامن،بدل کے رستہ بڑھاؤ الجھن   تمہیں د عاؤں سے پھر بھی میں نے، خدا سے پایا ، تو کیا کرو گے
 رحیم ہے وہ ، کریم ہے وہ ،وہی مسیحا ،وہی خدا ہے  اسی نے سن لیں مر ی دعائیں ، جو رحم کھایا تو کیا کرو گے

Bara dushwar hota hai Zara sa faisla karna..

Bara dushwar hota hai... Zara sa faisla karna.. Kay jeewan ki kahani ko... Baiyan -e-bezubani ko... Kahan say yad rakhna hai... Kahan say bhol jana hai... Kisy kitna batana hai... Kis say kitna chupana hai.. Kahan ro ro kay hansna hai.. Kahan hans hans kay rona hai.. Kahan awaz deni hai.. Kahan khamosh rehna hai.. Khan rasta badalna Hai.. Kahan say lot ana Hai.. Bara dushwar hotaHai..... !zara sa faisla Karna....!

Each moment of your life is like a picture

Each moment of Ur life is like a picture which you have never seen before and which you will never see again...so enjoy and live it.make each moment of you life beautiful

Dard se ashna hona ta kisi tawar hamay

Dard se ashna hona ta kisi tawar hamay Tu na milta tu kisi aur se bechry hote...

Mari nighah mein hain abar bhi samandar bhi

میری نگاہ میں ہیں ابر بھی، سمندر بھی سرابِ دشت بھی اور تشنگی کے منظر بھی
تلاش میری نہیں صرف اسکی آنکھوں تک میں خود کو ڈھونڈتا رہتا ہوں اپنے اندر بھی
یہ حادثاتِ جہاں بھی بتا نہیں سکتے ہے میری خاک کسی خاک کے مقدّر بھی
سہولتوں کی کشاکش میں دل نہیں لگتا پکارتا ہے کسی دشت کو میرا گھر بھی
مخالفت میں ہیں اک پھول کی ہمیشہ سے یہ تیر و نیزہ و تلوار و نوکِ خنجر بھی
عجیب ہے میرے لوگوں کا ذوق ِآرائش سجا کے رکھتے ہیں پھولوں کے ساتھ پتھر بھی

Kaheen chand rahoon may ko gaya kaheen chandni bhi batak gai

Kaheen chand rahoon may ko gaya kaheen chandni bhi batak gai May charagh wo bhi buja hoa mari raat kaisy chamak gai Mari dastan ka urooj ta tari narm palkon ki chaoon mai Mery sath ta tujay jagna,tari ankh kaisy japak gai kabhi hum miley bhi to kia miley,wohi dorian wohi fasley na khabhi hamarey qadam barhey,na khabhi tumhari jhijhak gai Tere hath se mairy hont tak waheen intezar ki pyass hay Mairy nam ki jo sharab te kaheen rasty mai chalak gai
Tujay bhool jany ki koshishan khabi kamyab na ho saki Tari yaad shakh a gulab hai jo hawa chali to Lachak gai